Header Ads

test

Pashto Poetry 2020 - pashto songs poetry - Shah Farooq song poetry of kakar production


Shah Farooq song Poetry of Kakar Production Songs

 

   Singer : Shah Farooq
          Lyrics : Khaksar Kharoti 
     Format : Pashto Poetry 
       Released : Kakar Production
Whatsapp : 03363554658

New Pashto poetry on Kakar Production by khaksar kharoti

پیکئ جوڑ کی لکہ نجونی
وو   چوی دہ  رگو   وینی

زما سوے دہ سترگو تور
جانانہ مہ خوشہ وہ نور

ستا ارمان بہ وڑمہ گورتہ
دہ زڑہ درد دی کو راپورتہ

شہ پہ پیارپیار ے لیکم
خاکسارخروٹئ دگران غم

زی منم چی شائستہ ے
تر قیامتہ بہ نو نہ ے

زڑہ می وو خوڑے جٹکے
لانچر بانڑو دی ور پہ سے

تا چی سنڈ ورکو پیکی تہ 
وور می ولویدو زڑگی تہ

بصیرترین ئے پہ غم بار
اکبر ناصر ئے دہ زڑہ یار

سلہ  رالے   دہ   زڑہ    کورتہ 
اوس بہ زم درپسی لاھور تہ

را شریک نہ دی پہ گران 
ایلہ شرو دی غمازان

ستا یارانے تہ می زڑہ کیژی ڑنگہ بنگہ ے

مہ پریژدہ ما خوار ژڑو لیژ غوندی بے ننگہ یے


سپین ٹیکرئ لمون گل دارہ
یے دہ  کوم  بختور  یارہ

پہ   ماگران   اختر   کاکڑ
کہ رقیب سی تر اسمان لوڑ

وڑہ شہ وے پہ غم لو سے
پہ ھر گای کی پہ سوچو سے

لرے    غٹہ     ستارہ
کلئ پہ تا دہ  شائستہ

زما  دی   غرقہ    کڑہ    بیڑہ 
خدائ دی دہ بل مہ کہ جوڑہ

جوڑ بہ نہ کمہ یار بل 
محمودغوری تہ ورزم تل

سڑئ باسی لہ ایمانہ 
سترگی مہ توروہ گرانہ

پہ ھر گائ دی وی نخرے
سترگی می ستا لہ غمو سرے

رقیبان  پے    سوزوم 
اکاش موبایل تہ ورزم

غم بہ جوڑ سی مابہ غل کے
راخبر   بہ    گرانہ   اخپل کے

پیکئ چی دوری دوری کے سرے لمبے راپوری کے
مڑبہ دی لہ غمہ سم مڑے سترگی چی توری کے


نہ  زبان    لرے   نہ   مینہ
دا دی سہ عادت دہ سپینہ

خلگو  وو   وتم   لہ   واکہ 
دہ گران سترگی دی بےباکہ

 ایلہ سر  ئے گار بہ سے
تی یا جواد  خروٹئ  ئے

عجبہ مڑے سترگی لرے 
صنمہ ڈیر بہ رنظور کے

پہ وفا  کی ے   دہ   وڑگی 
خوارقسمت نہ دہ راکڑگی

دا اوس گل کہ چمبیلئ دہ
خیال خروٹئ مہ زڑگئ دہ

دہ زڑہ ولگی پرے کوے
ملالئ سلہ خندے دے

خاکسار خروٹئ چی رازی
پہ رقیب وور اخلی کالی 

 کہ فائدہ دہ کہ تاوان 
سر ورکومہ پہ جانان

 خپل پردی می وھی پشے
نرئ پہ ڈیر خیال بہ رازے

ستا یارانے تہ می زڑہ کیژی ڑنگہ بنگہ ے

مہ پریژدہ ما خوار ژڑو لیژ غوندی بےننگہ ے

زما لہ حقہ ے سکارہ کے
رقیبان پہ وور پاخہ کے

نہ بہ   سمہ   بل   تہ اڑ
چی وی زوندئ اختر کاکڑ

زڑا   راسی   دم   پہ   دم 
گران پہ نشو اوس ھیروم

زی دہ غرق کڑمہ غمو 
پہ تا ٹینشن نستہ گرانو

انکار   وو    نہ   کے   لہ مینی
لہ زڑہ ساسی می سرے وینی

 زما لہ زڑہ کلہ وتئ
خیراللہ جی می دہ زڑگیہ

چی ٹالئ ورکے پیکی تہ 
ویلکم  وایمہ  مرگی  تہ

 نہ  تعلیم  نہ   سرمایہ 
پہ سہ مغرورہ گلہ یہ

سڑئ باسی لہ ایمانہ 
سترگی مہ توروہ گرانہ

بصیر ترین پہ تا ودان 
ڈیر ے مہ زوروہ گران


  پیکئ چی دوری دوری کے سرے لمبے راپوری کے
مڑ بہ دی لہ غمہ سم مڑے سترگی چی توری کے

Pashto Poetry of Khaksar Kharoti



No comments

Please do not enter any spam link in the commenrt box.